میری منافق محبتیں 
یار پاگل! مجھے لگتا ہے۔ میں یا تو منافق ہوں یا پھر عنقریب تیری طرح پاگل بننے والا ہوں. میرا مسئلہ ہی اتنا عجیب ہے. پاگل اور میں گلی کے نکڑ پر مٹھائی والے کی بند دکان کے تھڑے پر بیٹھے ہوۓ تھے۔ اس وقت جب میں نے پاگل کے سامنے دل کھول کر رکھہ دینے کا فیصلہ کیا.

پاگل ہماری گلی کا وہ شخص ہے جو روایتی پاگلوں سے ہٹ کر ہے. مطلب اگر آپ اسے پہلی بار دیکھیں گے تو آپ کا پہلا تاثر ہر گز اسکے بارے میں نامناسب نہیں ہوگا لیکن جب آپ تھوڑا سا وقت گزاریں گے اس سے بات کرین گے تو ایک لمحہ ضائع کیۓ بغیر اس کے پاس سے بھاگ جانا مناسب خیال کرینگے.

funny riddles for adults  funny riddles for kids  short funny riddles  funny questions and answers in hindi  funny tricky questions and answers  funny questions and answers to ask people  tricky riddles with answers  riddles and answers hard Funny Questions and Answers for Kids in English - Kids World Funکبھی کبھی دل لگی کے لیے میں اس کے پاس بیٹھ جایا کرتا ہوں۔ اسکی عجیب و غریب باتیں دوستوں میں دہرانا ہنسی مذاق کا اچھا بہانہ ہوا کرتا ہے۔ آج بھی جب دل پر اداسی کے گہرے بادل چھاۓ۔ پریشانی اور جنجھلاہٹ میں کچھ اور نہیں سوجا تو میں پاگل کے پاس آکر بیٹھ گیا۔

پاگل میری بات سن کر اپنے انوکھے انداز میں مسکرایا مجھے سوالیہ نظروں سے دیکھا۔

میں نے بات آگے بڑھائی۔ میرا مسئلہ یہ ہے کہ میں اپنی محبت پر قائم نہیں رہتا. کوئی آدھا درجن بار مجھے محبت ہوچکی ہے۔۔۔۔۔ایسا نہیں ہے کہ یہ محبتیں سب سے بیک وقت ہوئی ہیں یا پھر میں بے وفائی کا مرتکب ہوتا ہوں. ایسا بھی نہیں کے میری محبت ناپاک خیال یا گناہ کی سوچ سے آلودہ ہوتی ہے بس جب بھی مجھے کوئی لڑکی پسند آتی ہے اور کسی بھی بنا پر وہ مجھے چھوڑ دیتی ہے تو جلد ہی اسکی جگہ کوئی اور لڑکی میرے دل میں بس جاتی ہے میرا مطلب ہے کے اگر میں اپنی محبت میں سچا ہوتا ہوں تو یہ کس طرح ممکن ہے کہ میں اتنی جلدی کسی کو بھول کر دوسرے کو اپنے دل میں بسالوں کہیں میں اپنی ہر محبت میں منافق تو نہیں؟؟؟

میری بات سن کر پاگل نے ایک زبردست قسم کا قہقہ لگایا اور میرے خیال سے اس کی ہنسی کی آواز دور دور تک سنی گئی۔ آخر جب ہنستے ہنستے اس کے سیل ڈسچارج  ہو گئے تب تک زیادہ ہنسنے کی وجہ سے اسکی آنکھوں میں آنسو آچکے تھے۔

محبت کا یوں باربار ہونا جیسے تم نے ذکر کیا کوئی غلط بات نہیں نا ہی یہ منافققت کی دلیل ہے۔ محبت تو ہوتی ہی بار بار ہے ہاں جب تمہیں عشق ہوجائے گا تو تم پھر نہ چاہتے ہوۓ بھی اس پر قائم رہوگے۔

میں نے حیرت سے پاگل کو دیکھا۔ اسکی بات میرے سر پر سے گزر گئی تھی۔ بلا آخر میں نے اپنی حیرت کو الفاظ کا روپ دیا.

یار پاگل. عشق اور محبت دو الگ باتیں ہیں کیا؟

پاگل نے جواب دیتے ہوۓ مٹھی بھر کر مٹی اڑا دی۔ ہاں یہ دو الگ باتیں ہیں۔ محبت صرف کسی کو چاہنے کا نام ہے۔ کسی بھی وجہ سے۔۔۔۔۔۔۔کسی کی صورت سیرت دولت یا پھر کوئی بھی خاص ادا۔ جو تمہیں کسی کی محبت میں مبتلا کردیتی ہے اور عشق اس چاہت کی انتہا کو کہتے ہیں۔ جسے تم محبت کہتے ہو.

عشق وہ ہے جب تم تم نہ رہو۔ جب تم کسی کی محبت میں اس قدر آگے نکل جاؤ کہ اپنی ذات کو فراموش کردو. جب بادشاہی کا تخت اپنی وقعت کھودے. جب تختہ دار پر بھی تم انا الحق کا نعرہ لگاو. عشق وہ ہے جو تمہیں اپنا اسیر کردے تو دیوانہ کردیتا ہے اور دیوانے اپنی دیوانگی میں اس قدر مست وغرق رہتے ہیں کہ وہ تمھاری طرح بار بار کی محبت میں مبتلا نہیں ہوسکتے۔
تحریر:عدنان شفیق

Post a Comment Blogger

 
Top