اس قدر سخت ہے اے جان جہاں ہجر کی رات
کوئی آواز،نہ آہٹ، نہ ہی جینے کا سراغ
مہر بہ لب ہے خموشی بھی کئی برسوں سے
چاند تارے ہیں فلک پر نہ زمین پر ہے چراغ
روشنی بھی میری تقدیر سے خائف ہو کر
میرے آنگن سے بہت دور رہا کرتی ہے
حبس اتنا ہے کہ منہ زور ہوا کی سانسیں
میری دہلیز کو چھو لیں تو اکھڑ سکتی ہیں
!اور ایسے میں ستم دیکھ کہ اے جان جہاں
ذہن کے بند کواڑوں پہ ہے دستک دیتا
زینہ شب سے اترتا تیری یادوں کا ہجوم
خشک پتوں سا بکھرتا تیرے وعدوں کا ہجوم
کوچہ جاں میں یونہی رات گئے پھیلتی ہے
چند بکھرے ہوئے،ٹوٹے ہوئے خوابوں کی کسک
جیسے سوکھے ہوئے بےجان گلابوں کی مہک
سوچ۔۔۔۔ایسے میں دریار سے ٹھکرائے ہوئے
اپنی سانسوں سے بھی دھڑکن سے بھی اکتائے ہوئے
ہم اسیران وفا، زہر جفا کھائے ہوئے
کس طرح جینے کا سامان کیا کرتے ہیں؟
اور ہر روز۔۔۔۔
!!!میری جان کیا کرتے ہیں
sad love ghazal in hindi, sad ghazals heart touching, sad ghazals mp3, sad ghazals lyrics, sad ghazals poetry, sad ghazals in urdu, sad love poems, sad love poems that make you cry, pakistani love poems, all poetry love, hindi shayari ghazals, best urdu poetry collection

Post a Comment Blogger

 
Top