اچھا اخلاق دشمن کو بھی دوست بنادیتاہے،مسکراہٹ روح کا دروازہ کھول دیتی ہے۔ روح کا رشتہ ذہن سے، ذہن کا دماغ سے اور دماغ کا دل سے ہوتا ہے۔ چیز خوبصورت وہی ہونی چاہئے ظاہری ہو یا باطنی جو آپ کے میں خوشیاں بکھیرنے اور دل کی لگی کا باعث بنے اگر آپ ایک ہنستے ہوئے چہرے اوراچھے اخلاق کے مالک کوملیں یا دیکھیں گے تو آپ کا دل خوشی اور مسرت سے باغ باغ ہو جائےگا ،اچھا اخلاق دُشمن کو بھی دوست بنا لیتا ہے۔آپ اس شخص کوپسند کریں گے،جس کے چہرے پر مسکراہٹ ہو،اس کا اخلاق اچھا ہو،اس کے برعکس ایک ایسا چہرہ جس پر معمولی سی مسکراہٹ کا دور دور تک نشان نہ ہو بات کرنے کا ایسا اندازچہرے پر آڑھی ترچھی لکیریں چھوڑ جائے۔ ماتھے پر شکنیں ہوں ناک سکڑی ہوتوجلد ہی آپ اس سے اُکتا جائیں گے،اس سے بچنے کی کوشش کریں گے۔
muskurahat ka phool, akhlaq in islam, meaning of akhlaq, hadith akhlaq, akhlaq meaning in english, teaching of akhlaq, fiqh akhlaq aqiad and tareekh, akhlaq ahmed, akhlaq ahmed songsمسکراہٹ کا پہلا اصول یہ ہے کہ جب آپ مسکرانے لگیں تو اپنے ذہن کو تمام پریشانیوں سے آزاد کریں اس وقت آپ یہ سوچیں کہ آپ مختلف قسم کی فکروں یا جو بھی آپ کو فکر لاحق ہے ان سے آزاد ہیں اور یہ تصورکریں کہ ہر چیز خوبصورت ہے ہر چیز میں خوبصورتی اور اچھائی کا پہلو تلاش کریں تب ہی آپ بھرپور مسکراہٹ چہرے پر پھیلا سکتے ہیں اور خوش شخصیت کی حامل بن سکتے ہیں۔گفتگو کرتے وقت اپنے اخلاق کا خاص خیال رکھیں،آپ کا اخلاق اچھا ہو گا توہر کوئی آپ کو پسند کرے گا۔
انسان اس وقت سب سے زیادہ حسین ہوتا ہے جب وہ مسکرا رہا ہو اور سب سے زیادہ بُرا اس وقت نظر آتا ہے، دکھاو ے کی مسکراہٹ چہرے سے عیاں ہو جاتی ہے۔ مسکراہٹ آنکھوں میں شرارت گالوں پر بکھری سرخی دیکھ کر بھلا کون متاثر نہ ہو گا کون خوش نہ ہو گا۔ ہونٹوں سے نکلتے برے الفاظ سن کر ہر شخص نفرت کا اظہار کرتاہے۔
 ایک فرانسیسی ادیب  'روکتے' نے لکھا  سب سے زیادہ دل خوش اس وقت ہوتا ہے جب کوئی ہنستا مسکراتا شخص تمہارے قریب بیٹھا ہو۔ ڈاکٹر ہیوف کا کہنا ہے ہنسنا ایک بہت صحت مند ورزش ہے اور غذا کو ہضم کرنے میں مدد گارثابت ہوتی ہے۔ڈاکٹر مارشل کہتے ہیں کہ اگر آپ عقل مند ہیں توخوش رہیں اور دوسروں کو بھی خوش رکھنے کی کوشش کریں ۔

Post a Comment Blogger

 
Top